M. Hameed Shahid

Daily Archives: ديسمبر 8, 2015

جنم جہنم-3|محمد حمید شاہد

اور وہ کہ جس کے چہرے پر تھوک کی ایک اور تہہ جم گئی تھی۔ اُس کی سماعتوں سے تھوک کر چلی جانے والی کے قہقہوں کی گونج اَبھی تک ٹکرا رہی تھی وہ اُٹھا۔ بڑ بڑایا۔ ’’جہنم۔ لعنت‘‘ پھر اَپنے وجود پر نظر ڈالی اور لڑکھڑا کر گر گیا۔ …

» مزید پڑھئیے

جنم جہنم-2|محمد حمید شاہد

وہ جو زِیست کی نئی شاہ راہ پر نکل کھڑی ہوئی تھی اُس کا دَامن گذر چکے لمحوں کے کانٹوں سے اُلجھا ہی رہا۔ اُس نے اَپنے تئیں دیکھے جانے کی خواہش کا کانٹا دِل سے نکال پھینکا تھا ‘مگر گزر چکے لمحے اُس کے دِل میں ترازو تھے۔ ’’یہ …

» مزید پڑھئیے

جنم جہنم-1|محمد حمید شاہد

’’یہ جو نظر ہے نا! منظر چاہتی ہے۔ اور یہ جو منظر ہے نا! اَپنے وجود کے اِعتبار کے لیے ناظر چاہتا ہے۔ دِیکھنے اور دِیکھے جانے کی یہ جو اشتہا ہے نا! یہ فاصلوں کو پاٹتی ہے۔ اور فاصلوں کا وجود جب معدوم ہو جاتا ہے نا! تو جہنم …

» مزید پڑھئیے

محمد حمید شاہد l جدید سندھی ادب:میلانات‘رجحانات‘امکانات

:رگ وید میں لکھا ہے ََاے سندھو !تیری موجوں کی گھن گرج زمین سے آسمان تک پہنچتی ہے۔ تیری بپھری ہوئی لہروں میں زندگی کی برق رفتار روانی اور بہاؤ ہے اور جب گرجتے بادل تجھ پر برستے ہیں تو تُو کسی حاملہ عورت کی طرح اٹھلا اٹھلا کر چلتا …

» مزید پڑھئیے