M. Hameed Shahid
Home / تازہ ترین

تازہ ترین

جہدمسلسل کا نام کشورناہید|محمد حمید شاہد

کشور ناہید کی 80 ویں سالگرہ پر لکھی گئی خصوصی تحریر کیا آپ ایک ایسی خاتون کو جانتے ہیں جو 80 ویں سالگرہ منارہی ہیں مگر ایسی باہمت ہیں کہ ان پر رشک آتا ہے۔ وہ اپنے دکھوں پر کڑھتے رہنے  اور اپنی بیماری اور اکلاپے کا رونا رونے کی …

» مزید پڑھئیے

وبا کے دن اور اپنا مختیارا|محمد حمید شاہد

مجھے برسوں بعد اچانک مختیارا یادآیاتھا ۔ جی،اپنے والا مختیارا، وہ نہیں جو وزیر اعظم کے ترجمان ندیم افضل چن کی سوشل میڈیا پر لیک ہو کر وائرل ہونے والی وائس کال کی وجہ سے آپ سمجھ رہے ہیں ۔ میری یادداشت والے مختیارے کا تعلق میرے بچپن سے ہے …

» مزید پڑھئیے

کورونا اور قرنطینہ|محمدحمیدشاہد

ابھی ایک پیغام پڑھ ہی رہا تھا کہ ایک اور نوٹیفکیشن سیل کے ڈسپلے کے اوپر والے حصے میں نمودار ہوا۔نیا نوٹیفکشن پہلے پیغام کی طرح کووِڈ۹۱ کے بارے میں کوئی حکومتی اعلان نہ تھا، یہ ساتھ والے سیکٹر سے میرے ایک دوست کا واٹس ایپ تھا جس میں ایک …

» مزید پڑھئیے

وبا،بارش اور بندش|محمدحمیدشاہد

محمد حمید شاہد | وبا،بارش اور بندش گزر چکے دو دنوں میں تو جیسے جاڑا مڑ کر پھر سے آگیا تھا اورآتے ہی یوں ہڈیوں میں رچ بس گیاتھا کہ لگا اب یہ جانے کا نہیں۔ اپریل کا مہینہ آلگا تھا، ہم حکومتی اعلان کے مطابق لاک ڈاؤن کی وجہ …

» مزید پڑھئیے

وبا کےدن اورگندم کی مہک|محمد حمید شاہد

محمد حمید شاہد وبا کے دِن اور گندم کی مہک لمحہ لمحہ اذیت دے کر گزرتے ان دنوں کو ہمارے نظم نگار دوست مقصود وفا نے ”قید میں رکھے ہوئے دِن“ کہا ہے۔ قید میں رکھے ان دنوں میں ہم بھی قید ہیں اور ہمارا تخیل بھی۔اپنی حالت یہ ہے …

» مزید پڑھئیے

محمد حمید شاہد |افسانہ کون لکھے ؟

رونامہ جنگ کراچی،راولپنڈی،لاہور، لندن 20/3/2019 سعادت حسن منٹو کے سامنے ایک بار یہ سوال رکھا گیا کہ بتائیے ’’آپ کیوں کر لکھتے ہیں؟‘‘ تومنٹو نے پہلے تو پلٹ کر کہا کہ ’’یہ ’کیونکر‘ میری سمجھ میں نہیں آیا۔‘‘ پھر خود ہی اس سے مراد ’’کیسے اور کس طرح‘‘ لے کراپنے …

» مزید پڑھئیے

محمد حمید شاہد|جمہوریت،انتخابی عمل اور ادیب

پہلا سوال جو میرے سامنے ہے ،یہی ہے کہ آخر جمہوریت ہے کیا؟ایک خیال ہے، جمہوریت ایک ایسے طرز حکومت کی بنیاد فراہم کرنے کا نام ہے جس میں ریاستی وسائل ایک فرد یا مخصوص گروہ کی دسترس میں رہنے کے بجائے پورے معاشرے کی مرضی کے مطابق استعمال ہوتے …

» مزید پڑھئیے

محمدحمیدشاہد|محمدعمرمیمن کی یاد میں

مجھے یاد ہے ، وہ ادبی جریدے ’’آج‘‘ کراچی کا دوسرا شمارہ تھا، جو چیک ادیب میلان کنڈیرا کی تحریروں کے انتخاب پر مشتمل تھا۔ اس میں ناول ’’خندہ اور فراموشی کی کتاب‘‘( The book of laughter and forgetting )کے ایک حصے کا ترجمہ ڈاکٹرآصف فرخی کا تھا، جبکہ محمد …

» مزید پڑھئیے

سیمان کی ڈائری|مشتاق احمد یوسفی کی رحلت پر اہل ادب کے تاثرات

افتخار عارف: چراغ تلے سے آبِِ گم کا سفر مشتاق یوسفی کے حقیقی جوہر کی آئینہ داری کرتا ہے۔ وہ بلاشبہ اردو کے لیے باعثِ امتیاز تھے۔ محمد حمید شاہد: اب مشتاق احمد یوسفی ایک بھر پور زندگی گزارنے کے بعد اور اردو ادب کا مستقل باب ہو کر رخصت …

» مزید پڑھئیے