M. Hameed Shahid
Home / Urdufiction (page 18)

Urdufiction

آصف فرخی|منٹوکے مطالعے کا نیارُخ

میرا صاحب منٹو۔۔۔” برسوں پہلے قائد اعظم محمد علی جناح کے ڈرائیور کی باتیں سن کر منٹو نے مضمون لکھا تھا”میرا صاحب۔” منٹو صدی کے ہنگام میں اس مضمون کا نام بار بار میرے ذہن میں آتا رہا، وہی منٹو جسے محمد حمید شاہد نے اپنی نئی کتاب کی پہلی …

» مزید پڑھئیے

ضیاجالندھری کی شاعری میں وقت اور زندگی کا تناظُر|محمد حمید شاہد

کہتے ہیں دلی میں ایک تقریب کے بعد اپیندر ناتھ اشک نے اپنی نشست سے اٹھ کرکرسی کی پشت پر ہاتھ جمائے اور سب کو مخاطب کرکے کہا: دوستو میں آپ کو اس وقت کویتا سنا سکتا ہوں اور لطیفہ بھی ۔ کہو کیا سناﺅں؟ ۔ راجندر سنگھ بیدی نے …

» مزید پڑھئیے

حسن کوزہ گر- اے حسن کوزہ گر| محمد حمید شاہد

صدارتی خطبہ :حاشیہ احباب حاشیہ ! جاوید انور کی یاد کے نام منعقد ہونے والا یہ اہم اجلاس اختتامی مرحلے میں ہے اور مجھے اپنے صدارتی کلمات آپ تک پہنچانے ہیں اور واقعہ یہ ہے کہ اس سارے عرصہ میں، مجھے جاوید انور کی یاد نے واقعی بہت ستایا ہے …

» مزید پڑھئیے

مبین مرزا|مرگ زارکے افسانے

  معزز خواتین و حضرات! ….محمد حمید شاہد ہم عصر افسانوی ادب کا سنجیدہ حوالہ ہیں ۔ وہ افسانہ نگار بھی ہیں اور نقاد بھی۔ تنقید میں بھی ان کاکام اُن کی شناخت کے نقوش مرتب کرتا ہے اور ہم عصر تنقید کے سرمائے میںایک زیرک‘ سنجیدہ اور بے لاگ …

» مزید پڑھئیے

سیّد مظہر جمیل|مرگ زار اور دوسری کہانیاں

محمد حمید شاہد نے اپنے ایک تازہ مضمون ( دہشت کے موسم میں کہانی کا چلن) میں معاصر کہانی کو بے حسی کے مخمصے میں گرفتار عقل ِعیار کی کارستانی سے تعبیر کیا ہے جو آنکھوں کے سامنے بپا قیامتوں سے آنکھیں چار کرنے سے دیدہ و دانستہ گریز کرتی …

» مزید پڑھئیے

پروفیسر فتح محمد ملک|بند آنکھوں سے پرے‘ جنم جہنم اور مرگ زار

محمد حمید شاہد ظاہر کی آنکھ سے تماشا کرنے کے خوگر بھی ہیں اور دل کی آنکھ کھولنے میں کوشاں بھی۔ وہ عصری زندگی کے مصائب پر یوں قلم اٹھاتے ہیں کہ عصریت اور ابدیت میں ماں بیٹی کا رشتہ قائم ہو جاتا ہے ۔ ان کی کہانیاں شہر وجود …

» مزید پڑھئیے

امجد طفیل|محمد حمیدشاہد کے افسانے

محمد حمید شاہد کا شمار اپنی نسل کے نہایت متحرک اور فعال تخلیق کاروں میں ہوتا ہے ۔ اُس نے افسانے‘ تنقید اور ترجمے کے میدان میں نہایت اچھی تحریریں اپنے پڑھنے والوں کو دیں ہیں۔ محمد حمید شاہد کا رویہ ایک ایسے تخلیق کار کا رویہ ہے جو اپنے …

» مزید پڑھئیے

جنم جہنم-3|محمد حمید شاہد

اور وہ کہ جس کے چہرے پر تھوک کی ایک اور تہہ جم گئی تھی۔ اُس کی سماعتوں سے تھوک کر چلی جانے والی کے قہقہوں کی گونج اَبھی تک ٹکرا رہی تھی وہ اُٹھا۔ بڑ بڑایا۔ ’’جہنم۔ لعنت‘‘ پھر اَپنے وجود پر نظر ڈالی اور لڑکھڑا کر گر گیا۔ …

» مزید پڑھئیے

جنم جہنم-2|محمد حمید شاہد

وہ جو زِیست کی نئی شاہ راہ پر نکل کھڑی ہوئی تھی اُس کا دَامن گذر چکے لمحوں کے کانٹوں سے اُلجھا ہی رہا۔ اُس نے اَپنے تئیں دیکھے جانے کی خواہش کا کانٹا دِل سے نکال پھینکا تھا ‘مگر گزر چکے لمحے اُس کے دِل میں ترازو تھے۔ ’’یہ …

» مزید پڑھئیے

جنم جہنم-1|محمد حمید شاہد

’’یہ جو نظر ہے نا! منظر چاہتی ہے۔ اور یہ جو منظر ہے نا! اَپنے وجود کے اِعتبار کے لیے ناظر چاہتا ہے۔ دِیکھنے اور دِیکھے جانے کی یہ جو اشتہا ہے نا! یہ فاصلوں کو پاٹتی ہے۔ اور فاصلوں کا وجود جب معدوم ہو جاتا ہے نا! تو جہنم …

» مزید پڑھئیے

Collection of premium WordPress themes