M. Hameed Shahid
Home / تازہ ترین / کشور ناہید|مستنصراورحمید شاہد کے افسانوں میں

کشور ناہید|مستنصراورحمید شاہد کے افسانوں میں

روزنامہ جنگ 31 جولائی 2015

M Hameed Shahid Intezar Hussain and Kishwer Naheed

“خود کش جیکٹس:مستنصر اور حمید شاہد کے افسانوں میں”

اقتباس

میں نے ایسی ہی سسکیاں لیتے ہوئے حمید شاہد کے افسانوں کی کتاب “دہشت میں محبت” کو پڑھا ۔ چاہے خروٹ آباد کا سانحہ ہو کہ کوئٹہ کا یا “تربت کا جہاں لوگوں کو بسوں سے اتار کر ان کے شناختی کارڈ دیکھ کر گولیاں ماری گئیں ۔ خاص طور پر کہانی”خونی لام ہوا قتلام بچوں کا” کس طرح کمسنی کی شادی کی کہانی بالکل بے ضرر طریقے سے بیان کی ہے، ہماری زندگی کے دوالمیے جو اب ہمیں دُکھ معلوم نہیں ہوتے،جیسے زچگی مین عورتوں کا مرنا اور پھر ہمارے بچوں کا ہر روز ٹیلی وژن پر خود کش حملہ آوروں کے قصے سن کر اور دیکھ کر کس طرح کہانی کا کردار توقیر “میں پھٹ جائوں گا” کا شور مچاکر سپاہی کی بندوق کا شکار ہو جاتا ہے۔

غنی قندہاری اور ریمنڈ کی کہانی میں ایک اندھی لڑکی ہے اور اندھا مرد بھی داخل ہو جاتا ہے ۔ افغان جنگ کے بھیانک سایوں کو مرتسم کرتا ہے ، بیانیہ بہت پرزور ہے ۔۔۔۔۔”کویٹہ میں کچلاک” اور “جنگ میں محبت کی تصویر نہیں بنتی” ایسی کہانیاں ہیں کہ پڑھتے ہوئے آپ کی مٹھیاں بھینچ جاتی ہیں آپ کے ہاتھوں سے اور آنکھوں سے لہو رستا ہوا محسوس ہوتا ہے ۔جملہ”ہمیں دو تین گھنٹے لاش اکٹھا کرنے میں لگ گئے”۔”آزاد بلوچستان” کی ویب سائٹ”پر اپ لوڈ کی گئی مرنے والے بلوچوں کی لاشیں ۔

بس کریں اب یہ فتوے ہتھوڑے بن کر لگتے ہیں ۔میں نے ٹیلی وژن لگا دیا نورالحسن کہہ رہا تھا”شہید مرا نہیں کرتے”۔ارے یہ تو حمید شاہد نے بھی لکھا ہے۔” وہ کہہ رہا تھا “شہیدوں کی مائیں رویا نہیں کرتیں ” پھر مجھے حمید شاہد کی کہانی “مرگ زار” یاد آگئی ۔ جس میں لکھا ہےاس میں ایک میں ہوں جس کی ہتھیلی سے گلاب جیسی اندھی عورت کی انگلیاں پھسل چکی ہیں ۔

وہ لوگ جو نہیں پڑھتے وہ پوچھتے ہیں کیا ان واقعات پر ادیب کچھ لکھتے ہیں مجھے ان کے بنجر ذہن پر رونا آتا ہے ۔ مگر لوگ تو عادی ہو کر روز صرف اتنا پوچھتے ہیں ۔”آج کتنے مرے؟”،”آج کہاں بم پھٹا؟”مجھے ایسی باتیں سن کر بچہ توقیر یاد آجاتا ہے جو چیخ چیخ کر کھلونا پستول ہاتھ میں لیے کہہ رہا تھا”میں پھٹ جائوں گا”،”میں پھٹ جائوں گا”۔

میں دیکھتی ہوں کہ ہماری لغت ، ہمارا منظر نامہ ، ہماری زبان سب کچھ بدل چکا ہے۔

page7

About Urdufiction

یہ بھی دیکھیں

ملتان : مکالمہ،ملاقاتیں اور کالم

مکالمہ اور ملاقاتیں افسانہ نگار محمد حمید شاہد کی ڈاکٹر انوار احمد سے ملاقات یوں طے …

اترك تعليقاً

لن يتم نشر عنوان بريدك الإلكتروني. الحقول الإلزامية مشار إليها بـ *