M. Hameed Shahid

Daily Archives: أكتوبر 28, 2015

محمد حمید شاہد|ن م راشد کی ایک انحرافی نظم

گماں کا ممکن: جو تو ہے میں ہوں ن م راشد کی نظم’’گماں کا ممکن : جو تو ہے میں ہوں‘‘ میرے لیے یوں اہم ہو گئی ہے کہ اس کے وسیلے سے اگر کو ئی چاہے تو ان سارے مخمصوں کی بنیاد کو تلاش کرسکتا ہے جوراشد کی شاعری …

» مزید پڑھئیے

منٹو کا دن :منٹو کے دن

سعادت حسن منٹو کی سوویں سالگرہ پرا کادمی ادبیات پاکستان کے زیر اہتمام ’’یوم منٹو‘‘منعقدہ ،۱۱ مئی ۲۰۱۲ میں محمد حمید شاہد نے یہ مضمون پڑھا منٹو کی سوویں سالگرہ: اکادمی ادبیات پاکستان میں منعقدہ اجلاس سے محمد حمید شاہد مخاطب ہیں ، اسٹیج پر ڈاکٹر انوار احمد(صدر نشین مقتدرہ …

» مزید پڑھئیے

ساقی فاروقی کی نظم “خالی بورے میں زخمی بلا”

خالی بورے میں زخمی بلا              نظم/ساقی فاروقی جان محمد خان سفر آسان نہیں دھان کے اس خالی بورے میں جان الجھتی ہے پٹ سن کی مضبوط سلاخیں دل میں گڑی ہیں اور،آنکھوں کے زرد کٹوروں میں چاند کے سکے چھن چھن گرتے ہیں اور …

» مزید پڑھئیے

تخلیق کی آزادی کا یہ چلن پہلے کہاں ممکن تھا

لمحہ لمحہ اپنی تجدید کرتے اسرار سے وابستہ رہنے کا ادرا ک آج کی تخلیقات میں روح بن کر دوڑرہاہے۔ افسانہ نگار‘ناول نگار اور نقاد محمد حمید شاہد سے مکالمہ: محمد حامد سراج محمد حامد سراج: ”برف کا گھونسلا“ آپ کے افسانوں کے مجموعہ کا پہلا افسانہ ہے۔” بند آنکھوں …

» مزید پڑھئیے

ادب کی تخلیق کاا پنا میکانزم ہوتاہے،محمد حمید شاہد|مکالمہ انیلہ محمود

 محمد حمید شاہد سے اوصاف، اسلام آباد کے لیےمکالمہ ادیب اورتہذیبی و قومی تقاضے ادیب کے لیے تہذیبی و قومی تقاضے کیا ہیں ؟یہ سوال بظاہر بہت دلکش اور لائق توجہ لگتا ہے لیکن اپنی نہاد اور طینت میں یہ ایک خرابی اور گمراہی بھی سمیٹے ہوئے ہے۔ یہ سوال …

» مزید پڑھئیے

غالب نے ہماری زبان کی لکنت دور کر دی تھی

اوصاف کے لیےمحمد حمید شاہد کی گفتگو سے مقتبس دیگرشرکا ءمکالمہۛ  رشید امجد، جلیل عالی ، مرزا حامد بیگ اس پل پل بدلتے زمانے میں جمی جمائی تہذیب کے نوحہ خواں اورانیسویں صدی کے شاعر غالب کو آپ نے یاد کرنے کا یہ جو حیلہ کیا ہے، مجھے اچھا لگ رہا …

» مزید پڑھئیے